ایموکسیلن

Amoxicillin (Urdu)

آپکے بچے کو ایموکسیلن نامی دوا لینے کی ضرورت ہوگی۔ یہ معلوماتی پرچہ آپکو اس بات کی وضاحت کرے گا کہ ایموکسیلن کیا کرتی ہے، اسکو کس طرح دیا جاتا ہے اور اسکو لینے کے بعد آپکے بچے کو کس طرح کے مسائل اور ضمنی اثرات پیش آئیں گے۔

یہ دوا کیا ہے؟

ایموکسیلن ایک ایسی دوا ہے جسے اینٹی بائیوٹک کہا جاتا ہے۔ اینٹی بائیوٹک کا استعمال ان جراثیم جنھیں بیکٹیریا کہتے ہیں، کی وجہ سے ہونے والی انفیکشن کے علاج اور اس سے بچاو کے لئے کیا جاتا ہے۔

آپ نے ایموکسیلن کے برینڈ کا نام ایموکسی سنا ہوگا۔ ایموکسیلن کیپسول، چبانے والی گولی اور مائع کی شکل میں آتی ہے۔

اپنے بچے کو یہ دوا دینے سے پہلے

اگر آپکے بچے کو ان میں سے کچھ ہو تو اپنے ڈاکٹر کو بتائیں۔

  • ایموکسیلن یا پینسیلن اینٹی بائیوٹک یا کسی اور اینٹی بائیوٹک سے الرجی ہو۔

گر آپکے بچے کی ان میں سے کوئی بھی کیفیت ہو تو اپنے بچے کے ڈاکٹر یا دواساز سے بات کریں۔ اگر ان میں سے آپکے بچے کو کچھ بھی ہو تو اس دوا کے بارے میں احتیاطی تدابیر کا خیال رکھنا پڑ سکتا ہے۔

  • گردے کی بیماری
  • معدے یا انتریوں کی بیماری خاص کر سوزِش قولون
  • فینلکیٹینوریا یا پی کے یو- کچھ چبانے والی ادویات میں فینیلالینائین ہوتا ہے

آپکو اپنے بچے کو یہ دوا کس طرح دینی چاہیے؟

اپنے بچے کو ایموکسلن دیتے وقت ان ہدایات پر عمل کریں۔

  • اپنے بچے کو تب تک ایموکسلن دیتے رہیں جب تک آپکا ڈاکٹر یا دواساز کہے، چاہے آپکا بچہ بہتر بھی نظر آرہا ہو۔ کسی بھی وجہ سے اس دوا کا استعمال روکنے سے پہلے اپنے ڈاکٹر سے بات کریں۔
  • اپنے بچے کو ایموکسلن ہر روز ایک ہی وقت پر دیں جس وقت آپکا ڈاکٹر یا دوا ساز کہے۔ خوراک چھوٹنے سے بچنے کے لئے اس وقت کا انتخاب کریں جو وقت آپکے لئے آرام دہ ہو۔
  • آپکو بچہ ایموکسلن کو کھانے ساتھ یا کھانے کے بغیر لے سکتا ہے۔
  • اگر آپکا بچہ چبانے والی گولی لے رہا ہو تو اسکو نگلنے سے پہلے اچھی طرح چبائے۔ آپ اس گولی کو پیس بھی سکتے ہیں۔
  • اگر آپکا بچہ ایموکسلن مائع کی شکل میں لے رہا ہو تو بوتل کو اچھی طرح ہلائیں۔ خاص چمچ سے یا پھر دواساز کی دی ہوئی بوتل سے دوا کی پیمائش کریں۔

اگر آپکے بچے کی خوراک چھوٹ جائے تو آپکو کیا کرنا چاہیے؟

  • یاد آنے پر جلد سے جلد اپنے بچے کو چُھوٹی ہوئی خوراک دیں۔
  • اگر اگلی خوراک کا وقت ہونے والا ہو تو چُھوٹی ہوئی خوراک کو چھوڑ کر اگلی خوراک اسکے وقت پر دیں۔
  • اپنے بچے کی چُھوٹی ہوئی خوراک کو پورا کرنے کے لئے اپنے بچے کو دو خوراکیں اکٹھی مت دیں۔

یہ دوا اپنا کام کرنے میں کتنا وقت لے گی؟

ایموکسلن کا استعمال شروع کرنے کے چند دن کے اندر آپکا بچہ بہتر محسوس کرنا شروع کر دے گا۔

اس دوا کے ممکن ضمنی اثرات کیا ہیں؟

ممکن ہے اس دوا کے استعمال کے دوران آپکے بچے پر اس دوا کے چند ضمنی اثرات ظاہر ہوں۔ اگر آپکے بچے کو ان ضمنی اثرات میں سے کوئی سے بھی اثرات محسوس ہوں اور یہ ختم نہ ہوں اور آپکے بچے کے لئے پریشانی کا بائث بنیں تو اپنے بچے کا اپنے ڈاکٹر سے معائنہ کروائیں۔

  • پانی والے پخانے یا ڈائریا
  • معدے میں مڑور اٹھنا یا معدے کا بھرا ہوا محسوس ہونا
  • خراب معدہ یا الٹیاں آنا

اگر آپ اپنے بچے میں ان میں سے کسی بھی قسم کے ضمنی اثرات دیکھیں تو اپنے ڈاکٹر کو دفتری اوقات میں فون کریں۔

  • کیفیت میں کوئی بہتری نہ آئے یا اگر آپکو لگے کے بچے کی طبیعت مزید خراب ہو رہی ہو۔
  • جلد پر ہلکے ریش

دیے گئے ضمنی اثرات عام نہیں ہیں مگر یہ کسی سنجیدہ بیماری کی نشاندہی ہو سکتے ہیں۔ اگر آپکے بچے کو ان میں سے کوئی بھی ضمنی اثرات ہوں تو فوراً اپنے بچے کے ڈاکٹر کو بلائیں یا پھر اسے ایمرجنسی میں لے کر جائیں۔

  • شدید جلد کے ریش، چھَپاکی[ابھری ہوئی یا سرخ خراش والی جلد]
  • سانس لینے میں مسئلہ، خرخراہٹ یا سانس کی کمی
  • منہ، ہونٹ، زبان یا گلے میں سوزش
  • غیرمعمولی تھکاوٹ کا کمزوری
  • نیا بخار یا نہ بہتر ہونے والا بخار
  • معدے میں شدید درد
  • شدید پانی والے پخانے جن میں خون یا لال ریشے ہو سکتے ہیں۔
  • شدید الٹیاں

جب آپکا بچہ اس دوا کا استعمال کر رہا ہو تو آپکو کیا حفاظتی اقدامات کرنے چاہیں؟

اپنے بچے کو کوئی بھی دوسری دوا (تجویزشدہ، غیر تجویز شدہ، جڑی بوٹیوں والی یا قدرتی مصنوعات) دینے سے پہلے اپنے ڈاکٹر یا دوا ساز کو دکھائیں۔

ہو سکتا پے کہ ایموکسلن کے ساتھ یا اس کے استعمال کے سات دن کے اندر پیدائش کو قابو میں رکھنے والی گولیاں کام نہ کریں۔ اگر آپکی بچی پیدائش کو قابو میں رکھنے والی دوا لے رہی ہو تو اسکے ڈاکٹر یا دواساز سے بات کریں۔

اگر آپکے بچے کو ذیابیطس ہو تو ایمولسلن آپکے بچے کے پیشاب میں گلوکوز کے ٹیسٹ کے نتائج غلط آنے کا بائث بن سکتا ہے۔ گلوکوز کو دیکھنے کے لئے کسی اور ٹیسٹ کے بارے میں اپنے دوا ساز سے بات کریں۔

آپکو کونسی ضروری معلومات ہونی چاہیں؟

ان تمام ادویات کی لسٹ بنائیں جو آپکا بچہ لے رہا ہو اور اسکو اپنے ڈاکٹر یا دواساز کو دکھائیں۔

اپنے بچے کی ادویات کسی دوسرے کے ساتھ مت بانٹیں۔ اپنے بچے کو کسی دوسرے کی ادویات مت دیں۔

اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپکے پاس ایموکسلن ہفتے کے آخر میں اور چھٹیوں کے دوران وافر مقدار میں موجود ہو۔ اپنی فارمیسی کو کم سے کم دو دن پہلے کال کریں۔ اس سے پہلے کے آپکے بچے کی دوا ختم ہو جائے۔

ایموکسلن کے کیپسول یا چبانے والی گولیوں کو کمرے کے درجہ حرارت میں ٹھنڈی اور خشک جگہ پر اور سورج کی روشنی سے دور رکھیں۔ اسکو غسل خانے یا باورچی خانے میں مت رکھیں۔

مائع ایموکسلن کو فریج میں رکھیں۔ اس دوا کو فریز مت کریں۔

ایسی ادویات مت رکھیں جن کی میعاد ختم ہو چکی ہو۔ متروک اور فالتو ادویات کو ضائع کرنے کے بہتریں طریقے کے بارے میں جاننے کے لئے اپنے دوا ساز سے بات کریں۔

ایموکسلن کو بچوں کی نظر اور پہنچ سے دور رکھیں اور اسے کسی محفوظ جگہ پر رکھیں۔ اگر آپکا بچہ بہت ذیادہ مقدار میں ایموکسلن استعمال کر لے تو اونٹاریو پوائزن سنٹر کے ان میں سے کسی ایک نمبر پر کال کریں۔ یہ کالیں مفت ہیں۔

  • اگر آپ ٹورونٹو میں ہیں تو 416-813-5900 پر کال کریں۔
  • اگر آپ اونٹاریو میں کسی اور جگہ پر رہتے ہیں تو 1-800-268-9017 پر کال کریں۔
  • اگر آپ اونٹاریو سے باہر رہتے ہیں تو اپنے لوکل پوائزن انفارمیشن سنٹر میں کال کریں۔

دست برداری: اس فیملی مڈ ایڈ میں مہیا کی گئی معلومات پرنٹنگ کے وقت درست تھیں۔ یہ کتابچہ ایموکسلن کی معلومات کا خلاصہ مہیا کرتا ہے اور اس میں دوا کے بارے میں مکمل معلومات نہیں ہیں۔ اس دوا کے تمام ضمنی اثرات کا نہیں بتایا گیا۔ اگر آپکا کوئی سوال ہے یا آپکو ایموکسلن کے بارے میں اور معلومات درکار ہوں تو اپنے قریبی ہیلتھ کئیر مہیا کرنے والے سے رابطہ کریں۔

Elaine Lau, BScPhm, PharmD, MSc, RPh

3/8/2008




Notes: