Sleep problemsSSleep problemsSleep problemsEnglishNANewborn (0-28 days);Baby (1-12 months);Toddler (13-24 months);Preschooler (2-4 years);School age child (5-8 years);Pre-teen (9-12 years)NANAConditions and diseasesCaregivers Adult (19+)NA2010-03-05T05:00:00ZMark Feldman, MD, FRCPC000Health (A-Z) - ConditionsHealth A-Z<p>​Learn about some of the common problems your child may have when sleeping and what you can do to help your child develop healthy sleep habits.</p><h2>What are sleep problems?</h2><p>Sleep problems occur when your child has difficulty settling down to sleep. They can also include small episodes of sleep or sleep interruptions. The constant night interruption can lead to baby irritation and parental fatigue. When your baby has trouble sleeping, it can be a hard time for the entire family. You can make bedtime less problematic and more enjoyable by learning some healthy sleeping tips.</p><h2>Healthy sleep patterns</h2><p>Your doctor may advise you of the average number of hours of sleep your child needs. Still, every child’s sleeping patterns are different. On average, newborns up to 6 months of age sleep 16 hours a day. Some babies sleep as little as 11 hours and some others sleep as much as 20 hours. Older babies (6 months to one year) sleep about 14 hours a day. Toddlers sleep between 10 and 13 hours. Pre-schoolers sleep between 10 and 12 hours.</p><h2>Key points</h2><ul><li>Sleep problems can lead to baby irritation and parental fatigue.</li><li>Develop a consistent nap and bedtime routine.</li><li>Create a welcoming and appropriate bedroom.</li><li>Slowly decrease the amount of time you spend with your child before they fall asleep.</li></ul>
مشاكل النومممشاكل النومSleeping problemsArabicNANewborn (0-28 days);Baby (1-12 months);Toddler (13-24 months);Preschooler (2-4 years);School age child (5-8 years);Pre-teen (9-12 years)NANAConditions and diseasesCaregivers Adult (19+)NA2010-03-05T05:00:00ZNA7.0000000000000071.00000000000001107.00000000000Flat ContentHealth A-Z<p>موجز سهل الفهم عن كيف يمكن مساعدة طفلك الرضيع او الطفل الاكبر سنا على تبني عادات النوم الصحي. تساعد النصائح لنوم صحي على جعل الذهاب الى الفراش عملية اكثر سهولة ومتعة لجميع افراد العائلة.</p>
睡眠障碍睡眠障碍Sleeping problemsChineseSimplifiedNANewborn (0-28 days);Baby (1-12 months);Toddler (13-24 months);Preschooler (2-4 years);School age child (5-8 years);Pre-teen (9-12 years)NANAConditions and diseasesCaregivers Adult (19+)NA2010-03-05T05:00:00Z71.00000000000007.000000000000001107.00000000000Flat ContentHealth A-Z简要概述了如何帮助婴儿或更大的孩子养成健康的睡眠习惯。健康睡眠技巧能够帮助全家人轻松愉快地享受就寝过程。<br>
睡眠障礙睡眠障礙Sleeping ProblemsChineseTraditionalNANewborn (0-28 days);Baby (1-12 months);Toddler (13-24 months);Preschooler (2-4 years);School age child (5-8 years);Pre-teen (9-12 years)NANAConditions and diseasesCaregivers Adult (19+)NA2010-03-05T05:00:00Z71.00000000000007.000000000000001107.00000000000Flat ContentHealth A-Z簡要概述了如何幫助嬰兒或更大的孩子養成健康的睡眠習慣。健康睡眠技巧能够幫助全家人輕鬆愉快地享受就寢過程。
Troubles du sommeilTTroubles du sommeilSleeping ProblemsFrenchNANewborn (0-28 days);Baby (1-12 months);Toddler (13-24 months);Preschooler (2-4 years);School age child (5-8 years);Pre-teen (9-12 years)NANAConditions and diseasesCaregivers Adult (19+)NA2010-03-05T05:00:00ZMark Feldman, MD, FRCPC000Health (A-Z) - ConditionsHealth A-Z<p>Apprenez-en davantage sur les troubles courants du sommeil qui peuvent se manifester chez votre enfant et ce que vous pouvez faire pour l’aider à acquérir de bonnes habitudes de sommeil.</p><h2>Que sont les troubles du sommeil?</h2> <p>Les troubles du sommeil se manifestent quand votre enfant a de la difficulté à s'endormir. Ils peuvent aussi comprendre de courts épisodes de sommeil ou des interruptions du sommeil. Une interruption constante du sommeil peut rendre un bébé irritable et engendrer de la fatigue chez les parents. Si votre bébé a de la difficulté à dormir, il peut en résulter des difficultés pour toute la famille. Vous pouvez rendre l’heure du coucher mois problématique et plus agréable en appliquant quelques conseils sur les bonnes habitudes de sommeil.</p> <h2>Bonnes habitudes de sommeil</h2> <p>Votre médecin peut vous renseigner sur le nombre d’heures de sommeil dont votre enfant a besoin en moyenne. Tout de même, chaque enfant a des habitudes de sommeil différentes. En moyenne, les nouveau-nés jusqu’à l’âge de six mois dorment 16 heures par jour. Certains bébés ne dorment que 11 heures tandis que d’autres dorment jusqu'à 20 heures. Les bébés plus âgés (de six mois à un an) dorment environ 14 heures par jour. Les tout-petits dorment entre 10 et 13 heures. Les enfants d’âge préscolaire dorment entre 10 et 12 heures. </p><h2>À reten​ir</h2> <ul> <li>Les troubles du sommeil peuvent causer une irritabilité chez le bébé et de la fatigue chez les parents.</li> <li>En moyenne, les nouveau-nés dorment un total de 16 heures.</li> <li>Jusqu’à un enfant sur trois montre un refus de dormir.</li> <li>Élaborez une routine régulière pour la sieste et l’heure du coucher.</li> <li>Créez un environnement approprié favorable au sommeil.</li> <li>Réduisez lentement le temps que vous passez avec votre enfant avant qu’il ne s’endorme.</li> </ul>
Trastornos del sueñoTTrastornos del sueñoSleeping ProblemsSpanishNAChild (0-12 years);Teen (13-18 years)NANANAAdult (19+)NA2010-03-05T05:00:00Z71.00000000000007.000000000000001107.00000000000Flat ContentHealth A-Z<p></p>
سونےمیں مشکلاتسسونےمیں مشکلاتSleeping ProblemsUrduNAChild (0-12 years);Teen (13-18 years)NANANAAdult (19+)NA2010-03-05T05:00:00Z71.00000000000007.000000000000001107.00000000000Flat ContentHealth A-Z
நித்திரை செய்வதில் பிரச்சினைகள்நித்திரை செய்வதில் பிரச்சினைகள்Sleeping ProblemsTamilNAChild (0-12 years);Teen (13-18 years)NANANAAdult (19+)NA2010-03-05T05:00:00Z71.00000000000007.000000000000001107.00000000000Flat ContentHealth A-Z

 

 

سونےمیں مشکلات306.000000000000سونےمیں مشکلاتSleeping ProblemsسUrduNAChild (0-12 years);Teen (13-18 years)NANANAAdult (19+)NA2010-03-05T05:00:00Z71.00000000000007.000000000000001107.00000000000Flat ContentHealth A-Z<h2>نیند کی مشکلات کیا ہیں؟</h2><p>سونے کی مشکلات تب واقع ہوتی ہیں جب آپ کا بچہ سونے کے لیے تنگ کرے۔ اِس میں آنکھ لگنا اور وقفے وقفے کے لیے تھوڑی تھوڑی دیر سونا اور پھر اُٹھ جان بھی شامل ہو سکتا ہے۔ رات بھر مسلسل نیند سے جاگنا بچے کی حالت حساس اور والدین کے لیے تھکاوٹ کا بعص بن بن سکتا ہے۔ جب آپ کے بچے کو سونے میں مسلئہ ہو تو تمام خاندان والوں کے لیے یہ وقت بہت مشکل ہو سکتا ہے۔ نیند کے فائدے مند مشوروں سے آپ بستر پر مشکلات کا وقت گھَٹا سکتے ہیں اور اسے پُر لطف بنا سکتے ہیں۔</p><h2>سونے کا دورانیہ</h2><p>آپ کا ڈاکٹر آپ کو آپ کے بچے کے سونے کے لیے اوسطً گھنٹے بتائے گا جن کی بچے کو ضرورت ہو گی۔ پھر بھی ہر بچے کا نیند کا دورانیہ مختلف ہوتا ہے۔ عام طور پر، 6 مہینے سے زیادہ عمر کے بچے دن میں 16 گھنٹے سوتے ہیں۔ کچھ بچے کم سوتے ہیں جیسے 11 گھنٹے بھی اور کچھ بہت زیادہ جیسے 20 گھنٹے بھی۔ بڑے بچے جو 6 مہینے سے 1 سال تک کے ہوتے ہیں دن میں 14 گھنٹے سوتے ہیں۔ وہ بچے جو چلنا پھرنا سیکھتے ہیں 10 سے 13 گھنٹے سوتے ہیں۔ اسکول جانے کی عمر سے پہلے والے بچے 10 سے 12 گھنٹے سوتے ہیں۔</p><h2>نیند میں تنگی کی اقسام</h2><h3>سلانے میں مشکلات</h3><p>یہ مسلئہ شیِر خوار بچوں، چلنا پھِرنا سیکھنے والے بچے اور جوان بچوں میں بہت عام ہے۔ ہر 3 میں سے 1 بچہ سونے کے لیے بیدِلی ظاہر کرتا ہے۔</p><h3>علیحدہ اور اکٹھے سونے کے مسائل</h3><p>کئی خاندانوں میں والدین بچے کے ساتھ سونے کو ترجیح دیتے ہیں۔ کینیڈئین پیڈیئٹرک سوسائٹی اکٹھے سونا تجویز نہیں کرتی۔ کچھ والدین کا کہنا ہے کہ اکٹھے سونے سے بچے کو ماں کے دودھ کا متواتر ملنا برقرار رکھا جا سکتا ہے۔ لیکن یہ والدین کی نیند میں خلل پیدا کرتا ہے، دوستانہ رشتہ، یا بچہ سونے کے لیے آپ پر منحصر ہو جاتا ہے۔ بچوں کی نگہانی پالنے کی موت کا سنڈروم اور اکٹھے سونے کا آپس میں تعلق ہے۔ </p><h3>رات میں جاگنا</h3><p>رات میں جاگنا تب نمودار ہوتا ہے جب بچہ رات کے بیچ میں جاگ جائے اور دوبارہ سونے کے لیے رضامند نہ ہو۔ اکثر بچے رونا شروع کر دیتے ہیں یا بستر سے اُٹھ جاتے ہیں یا والدین کو پکارنا شروع کر دیتے ہیں۔ اِس طرح اُن کی نیند کی واپسی کے امکان والدین پر منحصر ہوتے ہیں۔ بچے کو تھَپکیاں دینی چاہیئے اور بستر پر دوبارہ لٹا دینا چاہیے۔ اِس طرح بچہ سکون بخش فَن خود بخود سیکھ لیتے ہیں۔</p><h2>ڈراونے خواب</h2><p>ڈراونے خواب بچوں میں ڈر اور خوف زدگی پیدا کر دیتے ہیں۔ یہ ڈراونے خواب بہت عام ہیں۔ ہر 2 میں سے 1 بچے کو یہ خواب آتے ہیں۔</p><h2>رات کا خوف </h2><p>رات کا خوف ڈراونے خوابوں سے مختلف ہے۔ یہ خوفناک منظر بچے منظر کش کرتے ہیں اور حواس باختہ حالت میں اُٹھتے ہیں۔ بچے اکثر ڈر سے چلاتے ہیں۔ عام طور پر بچوں کو یاد نہیں ہوتا کہ کیا چیز اُنھیں ڈر کی طرف لے کر جاتی ہے۔ </p><h2>نیند میں چلنا</h2><p>تمام بچوں میں نیند میں چلنے والوں کی شرح 15 فیصد ہے۔ یہ مسلئہ اکثر 4 سے 12 سال کی عمر کے بچوں کے ساتھ ہوتا ہے۔ نیند میں چلنے والے بچے عام طور پر گھر کے گرد بغیر کسی مقصد کے چکر کاٹتے ہیں۔ یہ بچے بے ڈھنگی سی اور احمکانہ حرکات کرتے ہیں یا باتھ روم کے علاوہ کسی دوسری جگہ پیشاب کرنا شروع کر دیتے ہیں۔ بچے کے دروازے پر کوئی گھنٹی باندھ دینے سے آپ اپنے بچے کی نیند میں چلنے کی آواز سن سکتے ہیں۔ </p><h2>سونے کی خوشگوار عادات </h2><p>شیرخوار بچوں کو جب آپ بیٹھا دیتے ہیں یا گلے سے لگا کر سُلا دیتے ہیں تو وہ آسانی سے سو جاتے ہیں۔</p><h3>بچے کے سونے میں پابندی پیدا کرنے میں مدد دینا</h3><p>بچے روٹین کی پابندی اچھی طرح کرتےہیں۔ آپ کا بچہ روز مرہ کی روٹین اور ہلکی نیند کا ردِ عمل اچھا دے گا۔ وہ بچے جو ہلکا ہلکا چلنا سیکھتے ہیں اُن کی ہلکی نیند 2 گھنٹے سے زیادہ کی نہیں ہونی چاہیئے جو دوپہر 4 بچے سے پہلے پہلے ختم ہو جانی چاہیئے۔ آپ کے بچے کی نیند اُس کی عمر اور اُس کی سطح توانائی پر منحصر کرتی ہے۔ سونے کی روٹین میں شامل ہے:</p><ul><li> بچے کو نہِلانا</li><li> کپڑے پہنانا</li><li> پستان کا دودھ یا بوتل کا دودھ دینا</li><li> روشنی ہلکی کرنا</li><li> لوریاں سنانا، تھپتھپی دینا</li><li> کہانی سنانا</li></ul><p>اِس کے بعد آپ بچے کو پنگھوڑے یا بستر پر لٹا دیں۔ آپ بچے کو پیار کریں اور کمرے سے چلے جائیں۔ سونے کی صحیح روٹین بچے کو اِس کا عادی بنانےمیں مدد دیتی ہے۔ </p><h3>سونے کے لیے خوشگوار ماحول بنانا</h3><p>کمرے کو تاریک اور خاموش رکھیں۔ رات کی ہلکی ہلکی روشنی ضروری نہیں۔ اِس کے بجائے برامدے میں میں روشنی جلا کر کمرے کا دروازہ تھوڑا سا کھول دیں۔ اِس طرح بچہ اندھیرے کے ڈر سے باتھ روم جانے سے نہیں کترائے گا۔ </p><p>آپ کے بچے کو کمر کے بَل سونا چاہیئے۔ جب وہ اِس قابل ہو جائیں کہ وہ خود کروٹ لے سکے تو اُس کی کروٹ بدلی کی کوئی ضرورت نہیں۔ کسی قسم کے کمبل یا کپڑے کی کوئی ضرورت نہیں جس کی وجہ سے بچے کو سانس لینے میں دشواری محسوس ہو۔ اُن کو خوابیدہ پہننے چاہیئے تاکہ کسی قسم کے کمبل کی ضرورت نہ پڑے۔</p><p>جب آپ کا بچہ سونے کے معمول سے آگاہ ہو جائے تو اُسے ایک پیارا سا کھِلونا دے دیں یا اُس کی تسکین کے لیے اُسے کمبل دے دیں۔ بچے کو ایسی اشیاء مت دیں جو اُس کے لیے خطرناک ہو اور جس کے بعص اُس کی پنگھوڑے میں موت واقع ہو جائے۔ </p><p>آپ کے بچے کو خود سونے کی عادت ڈالنی ہو گی۔ اگر اُس کی آنکھ کھُل جائے اور آپ غائب ہوں تو سلانے کے تمام عوامل رات بھر بار بار دہرانے ہوں گے۔</p><h3>بچے کے رونے پر ردِعمل</h3><p>جب بچہ کچھ مہینوں کا ہو تو بچے کے رونے پر اُس کا جواب دیں۔ رونا کسی چیز کی ضرورت کو ظاہر کرتا ہے۔</p><p>7 یا 8 مہینے کے بچے کے لیے سونے سے پہلے رونا بالکل نارمل بات ہے۔</p><p>بچے کا سونے سے پہلے رونا عام بات ہے۔ اگر آپ کا بچہ آہستہ آہستہ بڑا ہو رہا ہے تو کوشش کریں کے بچے کے ساتھ سونا آہستہ آہستہ کم کر دیں جس سے آپ بچے کو خود مختار کر سکیں۔ ایک طریقہ تو یہ ہے کہ بچے کو لٹائیں، کچھ منٹ کے لیے اکیللا چھوڑیں، واپس آئیں اور اُس کے ساتھ رہیں جب تک بچہ سو نہیں جاتا۔ ہر شام کو کمرے سے تھوڑی دیر دوری اختیار رکھیں۔ 5 سے 7 دن میں آپ کا بچہ اکیلے سونا سیکھ جائے گا۔ </p><h3>اپنے بچے کی نیند میں تاخیری کی تدابیر کو سمجھنا</h3><p>ایک بار آپ کا بچہ سونے کے اوقات سمجھ جائے تو وہ بڑے پیار سے حالات میں تبدیلی بھی لا سکتا ہے۔ جوان بچے سونے کے اوقات میں تاخیری لانے میں بڑے ماہر ہوجاتے ہیں۔ وہ پانی، ایک اور کہانی یا ایک اور لوری کی طلب کرتے ہیں۔ والدین اور دیکھ بھال کرنے والوں کو چاہیئے کہ بچے کو فوراً بستر پر لٹا دیں۔ بچے کو منع کریں اور بار بار ضِد کرنے پر اُن کو اِس کے انجام سے خبردار کریں۔ جیسا کہ دروازہ بند کر دیا جائے گا، یا اگلی بار سوتے وقت کہانی سننے کو نہیں ملے گی۔ </p><h2>اہم نکات</h2><ul><li> رات بھر نیند سے جاگنا بچے کی حالت حساس اور والدین کے لیے تھکاوٹ کا باعث  بن سکتا ہے۔</li><li> شیر خوار بچے اوسطاً روزانہ 16 گھنٹے سوتے ہیں۔</li><li> ہر 3 میں سے 1 بچہ سونے کا خواہشمند نہیں ہوتا۔</li><li> بچوں کے متواتر سونے کے اوقات بنا لیں۔</li><li> خوشگوار اور موزوں بستر کا بندوبست کریں۔</li><li> بچے کے سونے سے پہلے اُس کے ساتھ گزارنے کا وقت آہستہ آہستہ کم کر دیں۔</li></ul>​https://assets.aboutkidshealth.ca/AKHAssets/sleeping_problems.jpgسونےمیں مشکلات

Thank you to our sponsors

AboutKidsHealth is proud to partner with the following sponsors as they support our mission to improve the health and wellbeing of children in Canada and around the world by making accessible health care information available via the internet.